Sayings of the Messenger

 

بِسْمِ اللهِ الرَّحْمَنُ الرَّحِيم

In the Name of Allah, the Most Gracious, the Most Merciful

شروع ساتھ نام اللہ کےجو بہت رحم والا مہربان ہے۔

وَقَالَ مُجَاهِدٌ ‏{‏مَهِينٍ‏}‏ ضَعِيفٍ، نُطْفَةُ الرَّجُلِ‏.‏ ‏{‏ضَلَلْنَا‏}‏ هَلَكْنَا‏.‏ وَقَالَ ابْنُ عَبَّاسٍ الْجُرُزُ الَّتِي لاَ تُمْطَرُ إِلاَّ مَطَرًا لاَ يُغْنِي عَنْهَا شَيْئًا‏.‏ ‏{‏يَهْدِ‏}‏ يُبَيِّنُ‏.‏

مجاہد نے کہا مھین کا معنی ناتواں، کمزور (یا حقیر) مراد مرد کا نطفہ ہے۔ ضَلَلنَا کا معنی ہم تباہ ہوئے۔ اور ابن عباسؓ نے کہا کہ جُرُز وہ زمین ہے جہاں بالکل بارش کم ہوتی ہے جس سے کچھ فائدہ نہیں ہوتا (یا سخت اور خشک زمین) یَھدِ کا معنی بیان کرتا ہے۔

 

Chapter No: 1

باب قَوْلِهِ ‏{‏فَلاَ تَعْلَمُ نَفْسٌ مَا أُخْفِيَ لَهُمْ‏ مِّن قُرَّةِ أَعْيُنٍ}‏

The Statement of Allah, "No person knows what is kept hidden for them of joy ..." (V.32:17)

باب : اللہ تعالٰی کے اس قول فَلَا تَعلَم نَفسٌ ما اُخفِیَ لَھُم کی تفسیر

حَدَّثَنَا عَلِيُّ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، عَنْ أَبِي الزِّنَادِ، عَنِ الأَعْرَجِ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ عَنْ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ قَالَ اللَّهُ تَبَارَكَ وَتَعَالَى أَعْدَدْتُ لِعِبَادِي الصَّالِحِينَ مَا لاَ عَيْنٌ رَأَتْ، وَلاَ أُذُنٌ سَمِعَتْ، وَلاَ خَطَرَ عَلَى قَلْبِ بَشَرٍ ‏"‏‏.‏ قَالَ أَبُو هُرَيْرَةَ اقْرَءُوا إِنْ شِئْتُمْ ‏{‏فَلاَ تَعْلَمُ نَفْسٌ مَا أُخْفِيَ لَهُمْ مِنْ قُرَّةِ أَعْيُنٍ‏}‏‏.‏ وَحَدَّثَنَا سُفْيَانُ حَدَّثَنَا أَبُو الزِّنَادِ عَنِ الأَعْرَجِ عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ قَالَ قَالَ اللَّهُ مِثْلَهُ‏.‏ قِيلَ لِسُفْيَانَ رِوَايَةً‏.‏ قَالَ فَأَىُّ شَىْءٍ قَالَ أَبُو مُعَاوِيَةَ عَنِ الأَعْمَشِ عَنْ أَبِي صَالِحٍ قَرَأَ أَبُو هُرَيْرَةَ قُرَّاتِ‏.‏

Narrated By Abu Huraira : Allah's Apostle said, "Allah said, 'I have prepared for my pious worshipers such things as no eye has ever seen, no ear has ever heard of, and nobody has ever thought of.' " Abu Huraira added: If you wish you can read: 'No soul knows what is kept hidden (in reserve) for them of joy as reward for what they used to do.' "32.17.

ہم سے علی بن عبداللہ نے بیان کیا، کہا ہم سے سفیان بن عیینہ نے، انہوں نے ابو الزناد سے، انہوں نے اعرج سے، انہوں نے ابو ہریرہؓ سے، انہوں نے رسول اللہ ﷺ سے آپؐ نے فرمایا اللہ جل جلالہ ارشاد فرماتا ہےمیں نے اپنے نیک بندوں کے لئے وہ نعمتیں تیار کر رکھیں ہیں جس کو کسی آنکھ نے نہیں دیکھااور نہ کسی کان نے سنا، اور نہ کسی آدمی کے دل پر ان کا خیال گزرا۔ ابو ہریرہؓ نے یہ حدیث روایت کر کے کہا اگر تم چاہو تو اس حدیث کی تصدیق میں یہ آیت پڑھو فَلَا تَعلَم نَفسٌ ما اُخفِیَ لَھُم مِن قُرَّۃِ اَعیُنِ۔ اور ہم سے سفیان بن عیینہ نے بیان کیا، کہا ہم سے ابو ازّناد نے، انہوں نے اعرج سے، انہوں نے ابو ہریرہؓ سے، انہوں نے کہا اللہ تعالٰی ارشاد فرماتا ہے پھر وہی بیان کیا جو اوپر گزرا۔ سفیان سے کسی نے پوچھا تم نے یہ حدیث رسول اللہ ﷺ سے روایت کی۔ انہوں نے کہا پھر نہیں تو اورکیا۔ ابو معاویہ نے اعمش سے، انہوں نے ابو صالح سے یوں نقل کیا کہ ابو ہریرہؓ نے قرّات اعین پڑھا (بصیغہ ا جمع)


حَدَّثَنِي إِسْحَاقُ بْنُ نَصْرٍ، حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ، عَنِ الأَعْمَشِ، حَدَّثَنَا أَبُو صَالِحٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ يَقُولُ اللَّهُ تَعَالَى أَعْدَدْتُ لِعِبَادِي الصَّالِحِينَ مَا لاَ عَيْنٌ رَأَتْ، وَلاَ أُذُنٌ سَمِعَتْ، وَلاَ خَطَرَ عَلَى قَلْبِ بَشَرٍ، ذُخْرًا، بَلْهَ مَا أُطْلِعْتُمْ عَلَيْهِ ‏"‏‏.‏ ثُمَّ قَرَأَ ‏{‏فَلاَ تَعْلَمُ نَفْسٌ مَا أُخْفِيَ لَهُمْ مِنْ قُرَّةِ أَعْيُنٍ جَزَاءً بِمَا كَانُوا يَعْمَلُونَ‏}‏

Narrated By Abu Huraira : The Prophet, said, "Allah said, 'I have prepared for My pious worshipers such things as no eye has ever seen, no ear has ever heard of, and nobody has ever thought of. All that is reserved, besides which, all that you have seen, is nothing." Then he recited: 'No soul knows what is kept hidden (in reserve) for them of joy as a reward for what they used to do.' (32.17)

مجھ سے اسحاق بن نصر نے بیان کیا، کہا ہم سے ابو اسامہؓ نے، انہوں نے اعمش سے، کہا ہم سے ابو صالح نے، انہوں نے ابو ہریرہؓ سے، انہوں نے نبی ﷺ سے آپؐ نے فرمایا اللہ تعالٰی ارشاد فرماتا ہےمیں نے میں نے اپنے نیک بندوں کے لئے (بہشت میں) وہ نعمتیں تیار کر رکھی ہیں جن کو کسی کان نے نہیں دیکھا، نہ کسی کان نے سنا، اور نہ کسی آدمی کے دل پر گزریں۔ جو نعنتیں سینت کر میں نے رکھی ہیں۔ ان کے مقابل وہ معنتیں جو تم کو معلوم ہو گئی ہیں چھوڑو وہ تو بے حقیقت ہیں پھر یہ آیت تلاوت فرمائی فَلَا تَعلَم نَفسٌ ما اُخفِیَ لَھُم مِن قُرَّۃِ اَعیُنِ جَزَاءً بِمَا کَانُوا یَعمَلُونَ