Sayings of the Messenger

 

بِسْمِ اللهِ الرَّحْمَنُ الرَّحِيم

In the Name of Allah, the Most Gracious, the Most Merciful

شروع ساتھ نام اللہ کےجو بہت رحم والا مہربان ہے۔

وَقَالَ مُجَاهِدٌ ‏{‏رَانَ‏}‏ ثَبْتُ الْخَطَايَا‏.‏ ‏{‏ثُوِّبَ‏}‏ جُوزِيَ، وَقَالَ غَيْرُهُ الْمُطَفِّفُ لاَ يُوَفِّي غَيْرَهُ‏.‏

مجاہد نے کہا بَل رَٓانَ کا معنی یہ ہے کہ گناہ ان کے دل پر جم گیا۔ ثُوِّبَ بدلہ دئے گئے۔ الحریق شراب کو کہتے ہیں۔ خِتَامُہُ مِسک یعنی مشک کی مہر اس کے شیشے پر لگی ہو گی۔ تسنیم ایک لطیف عرق ہے جو بہشتیوں کی شراب پر ڈالا جائے گا۔ اوروں نے کہا مطفّف جو پورا ماپ تول نہ دے (دغا بازی کرے) ۔

 

Chapter No: 1

باب ‏{‏يَوْمَ يَقُومُ النَّاسُ لِرَبِّ الْعَالَمِينَ‏}‏

"The Day when (all) mankind will stand before the Lord of the Alamin (mankind, jinn and all that exists)" (V.83:6)

باب : اللہ کے اس قول یَومَ یَقُومُ النَّاسُ لِرَبِّ العٰلَمِینَ کی تفسیر

حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ الْمُنْذِرِ، حَدَّثَنَا مَعْنٌ، قَالَ حَدَّثَنِي مَالِكٌ، عَنْ نَافِعٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ ‏{‏يَوْمَ يَقُومُ النَّاسُ لِرَبِّ الْعَالَمِينَ‏}‏ حَتَّى يَغِيبَ أَحَدُهُمْ فِي رَشْحِهِ إِلَى أَنْصَافِ أُذُنَيْهِ ‏"‏‏.

Narrated By Abdullah bin Umar : The Prophet said, "On the Day when all mankind will stand before the Lord of the Worlds, some of them will be enveloped in their sweat up to the middle of their ears."

ہم سے ابراہیم بن منذر نے بیان کیا، کہا ہم سے معن بن عیسٰی نے، کہا مجھ سے امام مالک نے، انہوں نے نافع سے، انہوں نے عبداللہ بن عمرؓ سے کہ نبیﷺ نے فرمایا یَومَ یَقُومُ النَّاسُ لِرَبِّ العٰلَمِینَ سے ( قیامت کا دن مراد ہے) اس دن آدمی آدھے کانوں تک پسینے میں ڈوب جائے گا۔