Sayings of the Messenger

 

‏بِسْمِ اللهِ الرَّحْمَنُ الرَّحِيم

In the Name of Allah, the Most Gracious, the Most Merciful

شروع ساتھ نام اللہ کےجو بہت رحم والا مہربان ہے۔

وَقَالَ مُجَاهِدٌ هُوَ التِّينُ وَالزَّيْتُونُ الَّذِي يَأْكُلُ النَّاسُ‏.‏ يُقَالُ ‏{‏فَمَا يُكَذِّبُكَ‏}‏ فَمَا الَّذِي يُكَذِّبُكَ بِأَنَّ النَّاسَ يُدَانُونَ بِأَعْمَالِهِمْ، كَأَنَّهُ قَالَ وَمَنْ يَقْدِرُ عَلَى تَكْذِيبِكَ بِالثَّوَابِ وَالْعِقَابِ

مجاہد نے کہا وَ التین سے انجیر اور زیتون سے مشہور میوہ جو لوگ کھاتے ہیں، مراد ہے۔ فَمَا یُکَذِّبُکَ بَعدُ بِالدِّین یعنی کیا وجہ ہے جو تو اس بات کو جھٹلائے کہ قیامت کے دن لوگوں کو اپنے اعمال کا بدلہ ملے گا۔ گویا یوں کہا کون یوں کر سکتا ہے کہ تو ثواب اور عذاب کو جھٹلانے لگے۔

 

Chapter No: 1

باب

Chapter

باب :

حَدَّثَنَا حَجَّاجُ بْنُ مِنْهَالٍ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، قَالَ أَخْبَرَنِي عَدِيٌّ، قَالَ سَمِعْتُ الْبَرَاءَ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم كَانَ فِي سَفَرٍ فَقَرَأَ فِي الْعِشَاءِ فِي إِحْدَى الرَّكْعَتَيْنِ بِالتِّينِ وَالزَّيْتُونِ‏.‏ ‏{‏تَقْوِيمٍ‏}‏ الْخَلْقِ‏.‏

Narrated By Al-Bara : While the Prophet was on a journey, he recited Surat At-Tini waz-Zaituni (95) in one of the first two Rakat of the Isha prayer.

ہم سے حجاج بن منھال نے بیان کیا، کہا ہم سے شعبہ نے، کہا مجھ کو عدی بن ثابت نے خبر دی، کہا میں نے براء بن عازبؓ سے سنا، رسول اللہﷺ نے ایک سفر میں عشاء کی نماز میں ایک رکعت میں سورت و التّین پڑھی۔ تقویم کا معنی پیدائشی بناوٹ۔