Sayings of the Messenger

 

Chapter No: 1

باب فَضْلِ الصَّلاَةِ فِي مَسْجِدِ مَكَّةَ وَالْمَدِينَةِ

The superiority of offering As-Salat in the Masajid of Makkah (Al-Masjid Al-Haram), and Al-Medina (Al-Haram)

باب: مکہ اور مدینہ کی مسجد میں نماز پڑھنے کی فضیلت۔

حَدَّثَنَا حَفْصُ بْنُ عُمَرَ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، قَالَ أَخْبَرَنِي عَبْدُ الْمَلِكِ بْنُ عُمَيْرٍ، عَنْ قَزَعَةَ، قَالَ سَمِعْتُ أَبَا سَعِيدٍ ـ رضى الله عنه ـ أَرْبَعًا قَالَ سَمِعْتُ مِنَ النَّبِيِّ، صلى الله عليه وسلم وَكَانَ غَزَا مَعَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم ثِنْتَىْ عَشْرَةَ غَزْوَةً

Narrated By Quza'a : I heard Abu Said saying four words. He said, "I heard the Prophet (saying the following narrative)." He had participated in twelve holy battles with the Prophet.

قزعہ بن یحییٰ سے روایت ہے انہوں نے کہا: میں نے ابو سعید خدری سے چار باتیں سنیں انہوں نے کہا میں نے نبیﷺسےسنیں اور ابو سعید رضی اللہ عنہ نبیﷺ کے ساتھ بارہ غزوات میں شریک رہا ہے۔


حَدَّثَنَا عَلِيٌّ، حَدَّثَنَا سُفْيَانُ، عَنِ الزُّهْرِيِّ، عَنْ سَعِيدٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ لاَ تُشَدُّ الرِّحَالُ إِلاَّ إِلَى ثَلاَثَةِ مَسَاجِدَ الْمَسْجِدِ الْحَرَامِ، وَمَسْجِدِ الرَّسُولِ صلى الله عليه وسلم وَمَسْجِدِ الأَقْصَى ‏"‏‏

Narrated Abu Huraira: The Prophet said, "Do not set out on a journey except for three Mosques i.e. Al-Masjid-AI-Haram, the Mosque of Allah's Apostle , and the Mosque of Al-Aqsa, (Mosque of Jerusalem)."

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبیﷺ نے فرمایا: کجاوے نہ باندھے جائیں (یعنی سفر نہ کیا جائے)مگر تین مسجدوں کی طرف، ایک مسجد حرام، دوسرے مدینہ کی مسجد نبوی، تیسری مسجد اقصیٰ یعنی بیت المقدس۔


حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، قَالَ أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنْ زَيْدِ بْنِ رَبَاحٍ، وَعُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي عَبْدِ اللَّهِ الأَغَرِّ، عَنْ أَبِي عَبْدِ اللَّهِ الأَغَرِّ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ صَلاَةٌ فِي مَسْجِدِي هَذَا خَيْرٌ مِنْ أَلْفِ صَلاَةٍ فِيمَا سِوَاهُ إِلاَّ الْمَسْجِدَ الْحَرَامَ ‏"‏‏

Narrated By Abu Huraira : Allah's Apostle said, "One prayer in my Mosque is better than one thousand prayers in any other mosque except Al-Masjid-AI-Haram."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: میری اس مسجد میں ایک نماز مسجد حرام کے سوا دوسری اور مسجدوں کی ہزار نمازوں سے بہتر ہے۔

Chapter No: 2

باب مَسْجِدِ قُبَاءٍ

The Masjid Quba

باب: مسجد قبا کا بیان۔

حَدَّثَنَا يَعْقُوبُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ ـ هُوَ الدَّوْرَقِيُّ ـ حَدَّثَنَا ابْنُ عُلَيَّةَ، أَخْبَرَنَا أَيُّوبُ، عَنْ نَافِعٍ، أَنَّ ابْنَ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ كَانَ لاَ يُصَلِّي مِنَ الضُّحَى إِلاَّ فِي يَوْمَيْنِ يَوْمَ يَقْدَمُ بِمَكَّةَ، فَإِنَّهُ كَانَ يَقْدَمُهَا ضُحًى، فَيَطُوفُ بِالْبَيْتِ، ثُمَّ يُصَلِّي رَكْعَتَيْنِ خَلْفَ الْمَقَامِ، وَيَوْمَ يَأْتِي مَسْجِدَ قُبَاءٍ، فَإِنَّهُ كَانَ يَأْتِيهِ كُلَّ سَبْتٍ، فَإِذَا دَخَلَ الْمَسْجِدَ كَرِهَ أَنْ يَخْرُجَ مِنْهُ حَتَّى يُصَلِّيَ فِيهِ‏.‏ قَالَ وَكَانَ يُحَدِّثُ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم كَانَ يَزُورُهُ رَاكِبًا وَمَاشِيًا

Narrated By Nafi' : Ibn 'Umar never offered the Duha prayer except on two occasions: 1. Whenever he reached Mecca; and he always used to reach Mecca in the forenoon. He would perform Tawaf round the Ka'ba and then offer two Rakat at the rear of Maqam Ibrahim. 2. Whenever he visited Quba, for he used to visit it every Saturday. When he entered the Mosque, he disliked to leave it without offering a prayer. Ibn 'Umar narrated that Allah's Apostle used to visit the Mosque of Quba (sometime) walking and (sometime) riding.

حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہ دو دنوں کے علاوہ چاشت کی نماز نہیں پڑھتے تھے۔ ایک تو جس دن مکہ میں آتے چاشت کے وقت آتے پھر طواف کرتے، پھر مقام ابراہیم کے پیچھے دو رکعتیں پڑھتے، دوسرے جس دن مسجد قبا میں آتے، ہر ہفتہ وہاں جاتے جب مسجد میں جاتے تو بغیر نماز پڑھے وہاں سے نکلنا برا جانتے۔ نافع نے کہا:حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہ حدیث بیان کرتے تھے کہ رسول اللہﷺ مسجد قبا میں پیدل اور سوار دونوں طرح جاتے۔


قَالَ وَكَانَ يَقُولُ إِنَّمَا أَصْنَعُ كَمَا رَأَيْتُ أَصْحَابِي يَصْنَعُونَ، وَلاَ أَمْنَعُ أَحَدًا أَنْ يُصَلِّيَ فِي أَىِّ سَاعَةٍ شَاءَ مِنْ لَيْلٍ أَوْ نَهَارٍ، غَيْرَ أَنْ لاَ تَتَحَرَّوْا طُلُوعَ الشَّمْسِ وَلاَ غُرُوبَهَا‏

And he (i.e. Ibn 'Umar) used to say, "I do only what my companions used to do and I don't forbid anybody to pray at any time during the day or night except that one should not intend to pray at sunrise or sunset."

نافع نے یہ بھی کہا: کہ حضرت عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہ کہتے تھے میں تو ایسا ہی کرتا ہوں جیسے میں نے اپنے ساتھیوں کو کرتے دیکھا اور میں کسی کو کسی وقت نماز پڑھنے سے نہیں روکتا۔ رات اور دن میں جس وقت چاہے پڑھے۔ صرف اتنی بات ہے کہ قصد کرکے سورج نکلتے یا ڈوبتے وقت نہ پڑھے۔

Chapter No: 3

باب مَنْ أَتَى مَسْجِدَ قُبَاءٍ كُلَّ سَبْتٍ

Whoever visited the Masjid of Quba every Saturday

باب: ہر ہفتے مسجد قبا میں آنا۔

حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ مُسْلِمٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ دِينَارٍ، عَنِ ابْنِ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ كَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَأْتِي مَسْجِدَ قُبَاءٍ كُلَّ سَبْتٍ مَاشِيًا وَرَاكِبًا‏.‏ وَكَانَ عَبْدُ اللَّهِ ـ رضى الله عنهما ـ يَفْعَلُهُ‏

Narrated By 'Abdullah bin Dinar : Ibn 'Umar said, "The Prophet used to go to the Mosque of Quba every Saturday (sometimes) walking and (sometimes) riding." 'Abdullah (Ibn 'Umar) used to do the same.

حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: نبیﷺ مسجد قبا میں ہر ہفتے کے دن پیدل اور سوار ہوکر آتے، اور عبد اللہ بن عمر رضی اللہ عنہ بھی ایسا ہی کرتے۔

Chapter No: 4

باب إِتْيَانِ مَسْجِدِ قُبَاءٍ مَاشِيًا وَرَاكِبًا

To go to the Masjid of Quba , walking or riding

باب: مسجد قبا میں پیدل اور سوار ہو کر آنا۔

حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا يَحْيَى، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ، قَالَ حَدَّثَنِي نَافِعٌ، عَنِ ابْنِ عُمَرَ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ كَانَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَأْتِي قُبَاءً رَاكِبًا وَمَاشِيًا‏.‏ زَادَ ابْنُ نُمَيْرٍ حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ عَنْ نَافِعٍ فَيُصَلِّي فِيهِ رَكْعَتَيْنِ‏

Narrated By Ibn 'Umar : The Prophet used to go to the Mosque of Quba (sometimes) walking and sometimes riding. Added Nafi (in another narration), "He then would offer two Rakat (in the Mosque of Quba)."

حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: نبیﷺ مسجد قبا میں سوار اور پیدل دونوں طرح تشریف لاتے۔ ابن نمیر نے اتنا اور اضافہ کیا کہ وہاں دو رکعتیں پڑھتے۔

Chapter No: 5

باب فَضْلِ مَا بَيْنَ الْقَبْرِ وَالْمِنْبَرِ

The superiority of the place between the pulpit and the grave (of the Prophet (s.a.w))

باب: مسجد نبوی میں قبر اور منبر کے بیچ میں جو جگہ ہے اس کی فضیلت۔

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يُوسُفَ، أَخْبَرَنَا مَالِكٌ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي بَكْرٍ، عَنْ عَبَّادِ بْنِ تَمِيمٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ زَيْدٍ الْمَازِنِيِّ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ مَا بَيْنَ بَيْتِي وَمِنْبَرِي رَوْضَةٌ مِنْ رِيَاضِ الْجَنَّةِ ‏"‏‏

Narrated By 'Abdullah bin Zaid Al-Mazini : Allah's Apostle said, "Between my house and the pulpit there is a garden of the gardens of Paradise."

حضرت عبد اللہ بن یزید مازنی سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ نے فرمایا: میرے گھر اور میرے اس منبر کےدرمیان کا حصہ جنت کی کیاریوں میں سے ایک کیاری ہے۔


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، عَنْ يَحْيَى، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ، قَالَ حَدَّثَنِي خُبَيْبُ بْنُ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، عَنْ حَفْصِ بْنِ عَاصِمٍ، عَنْ أَبِي هُرَيْرَةَ ـ رضى الله عنه ـ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم قَالَ ‏"‏ مَا بَيْنَ بَيْتِي وَمِنْبَرِي رَوْضَةٌ مِنْ رِيَاضِ الْجَنَّةِ، وَمِنْبَرِي عَلَى حَوْضِي ‏"‏‏

Narrated By Abu Huraira : The Prophet said, "Between my house and my pulpit there is a garden of the gardens of Paradise, and my pulpit is on my fountain tank (i.e. Al-Kauthar)."

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: نبیﷺنے فرمایا: میرے گھر اور میرے منبر کے درمیان کا حصہ جنت کی کیاریوں میں سے ایک کیاری ہے اور میرا منبر (قیامت کے دن) میرے حوض پر ہوگا۔

Chapter No: 6

باب مَسْجِدِ بَيْتِ الْمَقْدِسِ

The Masjid of Bait-ul-Maqdis (Jerusalem)

باب: بیت المقدس کی مسجد کا بیان۔

حَدَّثَنَا أَبُو الْوَلِيدِ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ عَبْدِ الْمَلِكِ، سَمِعْتُ قَزَعَةَ، مَوْلَى زِيَادٍ قَالَ سَمِعْتُ أَبَا سَعِيدٍ الْخُدْرِيَّ ـ رضى الله عنه ـ يُحَدِّثُ بِأَرْبَعٍ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَأَعْجَبْنَنِي وَآنَقْنَنِي قَالَ ‏"‏ لاَ تُسَافِرِ الْمَرْأَةُ يَوْمَيْنِ إِلاَّ مَعَهَا زَوْجُهَا أَوْ ذُو مَحْرَمٍ‏.‏ وَلاَ صَوْمَ فِي يَوْمَيْنِ الْفِطْرِ وَالأَضْحَى، وَلاَ صَلاَةَ بَعْدَ صَلاَتَيْنِ بَعْدَ الصُّبْحِ حَتَّى تَطْلُعَ الشَّمْسُ، وَبَعْدَ الْعَصْرِ حَتَّى تَغْرُبَ، وَلاَ تُشَدُّ الرِّحَالُ إِلاَّ إِلَى ثَلاَثَةِ مَسَاجِدَ مَسْجِدِ الْحَرَامِ وَمَسْجِدِ الأَقْصَى وَمَسْجِدِي ‏"‏‏

Narrated By Qaza'a Maula : (Freed slave of) Ziyad: I heard Abu Said Al-khudri narrating four things from the Prophet and I appreciated them very much. He said, conveying the words of the Prophet. 1. "A woman should not go on a two day journey except with her husband or a Dhi-Mahram. 2. No fasting is permissible on two days: 'Id-ul-Fitr and 'Id-ul-Adha. 3. No prayer after two prayers, i.e. after the Fajr prayer till the sunrises and after the 'Asr prayer till the sun sets. 4. Do not prepare yourself for a journey except to three Mosques, i.e. Al-Masjid-AI-Haram, the Mosque of Aqsa (Jerusalem) and my Mosque."

زیاد کے غلام قزعہ سے روایت ہے انہوں نے کہا: میں نے ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ کو رسول اللہﷺکے حوالہ سے چار حدیثیں بیان کرتے ہوئے سنا جو مجھے بہت پسند آئیں۔ آپﷺ نے فرمایا: عورت اپنے شوہر یا کسی ذی رحم محرم کے بغیر دو دن کا بھی سفر نہ کرے اور دوسری یہ کہ عید الفطر اور عید الاضحیٰ دونوں دن روزے نہ رکھے جائیں۔ تیسری حدیث یہ کہ صبح کی نماز کے بعد سورج کے نکلنے تک اور عصر کے بعد سورج غروب تک کوئی نفل نماز نہ پڑھی جائے ، چوتھی یہ کہ تین مسجدوں کے سوا کسی کےلیے کجاوے نہ باندھے جائیں۔مسجد حرام ، مسجد اقصیٰ اور میری مسجد۔