Sayings of the Messenger

 

‏بِسْمِ اللهِ الرَّحْمَنُ الرَّحِيم

In the Name of Allah, the Most Gracious, the Most Merciful

شروع ساتھ نام اللہ کےجو بہت رحم والا مہربان ہے۔

وَقَالَ مُجَاهِدٌ ‏{‏الآيَةَ الْكُبْرَى‏}‏ عَصَاهُ وَيَدُهُ، يُقَالُ النَّاخِرَةُ وَالنَّخِرَةُ، سَوَاءٌ مِثْلُ الطَّامِعِ وَالطَّمِعِ وَالْبَاخِلِ وَالْبَخِيلِ، وَقَالَ بَعْضُهُمْ النَّخِرَةُ الْبَالِيَةُ، وَالنَّاخِرَةُ الْعَظْمُ الْمُجَوَّفُ الَّذِي تَمُرُّ فِيهِ الرِّيحُ فَيَنْخَرُ‏.‏ وَقَالَ ابْنُ عَبَّاسٍ ‏{‏الْحَافِرَةِ‏}‏ الَّتِي أَمْرُنَا الأَوَّلُ إِلَى الْحَيَاةِ‏.‏ وَقَالَ غَيْرُهُ ‏{‏أَيَّانَ مُرْسَاهَا‏}‏ مَتَى مُنْتَهَاهَا، وَمُرْسَى السَّفِينَةِ حَيْثُ تَنْتَهِي‏.

مجاہد نے کہا الاٰیۃ الکبرٰی سے مراد موسٰیؑ کا عصا اور ان کا ہاتھ ہے۔ عِظَامًا نَخِرَہ اور نَخِرَۃً دونوں طرح پڑھا ہے۔ جیسے طامع اور طمع اور باخل اور بخیل۔ بعضوں نے کہا نخرۃً اور نَاخِرَۃً میں فرق ہے۔ نخِرَۃً کہتے ہیں گلی ہوئی ہڈی کو اور ناخرۃ وہ ہڈی جس کے اندر ہوا جائے تو آواز نکلے۔ اور ابن عباسؓ نے کہا حَافِرَۃً ہماری وہ حالت جو (دنیا کی زندگی) میں ہے۔ اوروں نے کہا ایَّانَ مُرسٰھا یعنی اس کی انتہا (تھل) کہاں ہے۔ یہ مرسٰی سفینہ سے نکلا ہے۔ یعنی کشتی جہاں اخیر میں جا کر ٹھرتی ہے۔

 

Chapter No: 1

باب

Chapter

باب :

حَدَّثَنَا أَحْمَدُ بْنُ الْمِقْدَامِ، حَدَّثَنَا الْفُضَيْلُ بْنُ سُلَيْمَانَ، حَدَّثَنَا أَبُو حَازِمٍ، حَدَّثَنَا سَهْلُ بْنُ سَعْدٍ ـ رضى الله عنه ـ قَالَ رَأَيْتُ رَسُولَ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَالَ بِإِصْبَعَيْهِ هَكَذَا بِالْوُسْطَى وَالَّتِي تَلِي الإِبْهَامَ ‏"‏ بُعِثْتُ وَالسَّاعَةَ كَهَاتَيْنِ ‏"‏‏.‏

Narrated By Sahl bin Sad : I saw Allah's Apostle pointing with his index and middle fingers, saying. "The time of my Advent and the Hour are like these two fingers." The Great Catastrophe will overwhelm everything.

ہم سے احمد بن مقدام نے بیان کیا، کہا ہم سے فضیل بن سلیمان نے، کہا ہم سے ابو حازم نے، کہا ہم سے سہل بن سعدؓ نے، انہوں نے کہا میں نے رسول اللہﷺ کو دیکھا آپؐ نے بیچ کی انگلی اور کلمے کی انگلی سے اشارہ کر کے فرمایا کہ میں اور قیامت دونوں اس طرح ہیں (یعنی بیچ میں اور کوئی پیغمبر اور کوئی نئی شریعت والا نہیں آئے گا)۔