Sayings of the Messenger احادیثِ رسول اللہ

 
Donation Request

Sahih Al-Bukhari

Book: Penalty of Hunting While on Pilgrimmage (28)    كتاب جزاء الصيد

123

Chapter No: 21

باب سُنَّةِ الْمُحْرِمِ إِذَا مَاتَ

The legal way of (burying) a dead Muhrim.

باب: محرم جب مر جائے تو اس کا کفن دفن کیوں کر سنت ہے۔

حَدَّثَنَا يَعْقُوبُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، حَدَّثَنَا هُشَيْمٌ، أَخْبَرَنَا أَبُو بِشْرٍ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ أَنَّ رَجُلاً، كَانَ مَعَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَوَقَصَتْهُ نَاقَتُهُ، وَهُوَ مُحْرِمٌ، فَمَاتَ، فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ اغْسِلُوهُ بِمَاءٍ وَسِدْرٍ، وَكَفِّنُوهُ فِي ثَوْبَيْهِ، وَلاَ تَمَسُّوهُ بِطِيبٍ، وَلاَ تُخَمِّرُوا رَأْسَهُ، فَإِنَّهُ يُبْعَثُ يَوْمَ الْقِيَامَةِ مُلَبِّيًا ‏"

Narrated By Ibn 'Abbas : A man was in the company of the Prophet and his she-camel crushed his neck while he was in a state of Ihram and he died Allah's Apostle said, "Wash him with water and Sidr and shroud him in his two garments; neither perfume him nor cover his head, for he will be resurrected on the Day of Resurrection, reciting Talbiya."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے ایک شخص (حج میں) نبیﷺ کے ساتھ تھا اونٹنی نے احرام کی حالت میں اس کی گردن توڑ ڈالی وہ مرگیا تب رسول اللہﷺنے فرمایا: اس کو پانی اور بیری کے پتے سے نہلاؤ اور احرام کے جو دو کپڑے پہنے ہے اسی میں کفن دے دو اور خوشبو مت لگاؤ نہ اس کا سر ڈھانپو وہ قیامت کے دن لبیک کہتا ہوا اٹھایا جائے گا۔

Chapter No: 22

باب الْحَجِّ وَالنُّذُورِ عَنِ الْمَيِّتِ وَالرَّجُلُ يَحُجُّ عَنِ الْمَرْأَةِ‏

To perform Hajj on behalf of a dead person and to fulfil his vows. A man can perform Hajj on behalf of a woman.

باب : میت کی طرف سے حج اور نذر ادا کرنا اور مرد کا عورت کی طرف سے حج کرنا

حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا أَبُو عَوَانَةَ، عَنْ أَبِي بِشْرٍ، عَنْ سَعِيدِ بْنِ جُبَيْرٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ أَنَّ امْرَأَةً، مِنْ جُهَيْنَةَ جَاءَتْ إِلَى النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَقَالَتْ إِنَّ أُمِّي نَذَرَتْ أَنْ تَحُجَّ، فَلَمْ تَحُجَّ حَتَّى مَاتَتْ أَفَأَحُجُّ عَنْهَا قَالَ ‏"‏ نَعَمْ‏.‏ حُجِّي عَنْهَا، أَرَأَيْتِ لَوْ كَانَ عَلَى أُمِّكِ دَيْنٌ أَكُنْتِ قَاضِيَةً اقْضُوا اللَّهَ، فَاللَّهُ أَحَقُّ بِالْوَفَاءِ ‏"‏‏

Narrated By Ibn 'Abbas : A woman from the tribe of Juhaina came to the Prophet and said, "My mother had vowed to perform Hajj but she died before performing it. May I perform Hajj on my mother's behalf?" The Prophet replied, "Perform Hajj on her behalf. Had there been a debt on your mother, would you have paid it or not? So, pay Allah's debt as He has more right to be paid."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ جہینہ قبیلہ کی ایک عورت نبیﷺکے پاس آئی کہنے لگی: میری ماں نے حج کرنے کی منت مانی تھی لیکن وہ حج کرنے سے پہلے مرگئی کیا میں اس کی طرف سے حج کروں۔آپﷺنے فرمایا: ہاں، اس کی طرف سے حج کرو، بھلا اگر تیری ماں پر کسی کا قرضہ ہوتا تو تو ادا کرے گی (اس نے کہا ضرور) آپﷺنے فرمایا: پھر اللہ کا قرض ادا کرنا تو بہت ضروری ہے۔

Chapter No: 23

باب الْحَجِّ عَمَّنْ لاَ يَسْتَطِيعُ الثُّبُوتَ عَلَى الرَّاحِلَةِ

Performing Hajj for a person who cannot sit firmly on the mount.

باب : جو شخص اتنا ضعیف ہو کہ اونٹ پر بیٹھ نہ سکے اس کی طرف سے حج کرنا

حَدَّثَنَا أَبُو عَاصِمٍ، عَنِ ابْنِ جُرَيْجٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ سُلَيْمَانَ بْنِ يَسَارٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ، عَنِ الْفَضْلِ بْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهم ـ أَنَّ امْرَأَةً، ح‏.

Narrated Fadl bin Abbas (RA) : A woman...

حضرت فضل بن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک عورت؛


حَدَّثَنَا مُوسَى بْنُ إِسْمَاعِيلَ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْعَزِيزِ بْنُ أَبِي سَلَمَةَ، حَدَّثَنَا ابْنُ شِهَابٍ، عَنْ سُلَيْمَانَ بْنِ يَسَارٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ جَاءَتِ امْرَأَةٌ مِنْ خَثْعَمَ، عَامَ حَجَّةِ الْوَدَاعِ، قَالَتْ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنَّ فَرِيضَةَ اللَّهِ عَلَى عِبَادِهِ فِي الْحَجِّ أَدْرَكَتْ أَبِي شَيْخًا كَبِيرًا، لاَ يَسْتَطِيعُ أَنْ يَسْتَوِيَ عَلَى الرَّاحِلَةِ فَهَلْ يَقْضِي عَنْهُ أَنْ أَحُجَّ عَنْهُ قَالَ ‏"‏ نَعَمْ ‏"

Narrated By Ibn 'Abbas : A woman from the tribe of Khath'am came in the year (of ,Hajjat-ul-wada' of the Prophet) and said, "O Allah's Apostle! My father has come under Allah's obligation of performing Hajj but he is a very old man and cannot sit properly on his Mount. Will the obligation be fulfilled if I perform Hajj on his behalf?" The Prophet replied in the affirmative.

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: خثعم قبیلے کی ایک عورت جس سال حجۃ الوداع ہوا آپﷺکے پاس آئی کہنے لگی یا رسول اللہﷺ! اللہ نے جو اپنے بندوں پر حج فرض کیا وہ ایسے وقت پر کہ میرا والد اتنا بوڑھا ہے کہ اونٹنی پر تھم نہیں سکتا کیا، اس کا حج ادا ہوجائے گا اگر میں اس کی طرف سے حج کروں آپﷺ نے فرمایا: ہاں۔

Chapter No: 24

باب حَجِّ الْمَرْأَةِ عَنِ الرَّجُلِ

Performing Hajj by a woman on behalf of a man.

باب: عورت کا مرد کی طرف سے حج کرنا

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ مَسْلَمَةَ، عَنْ مَالِكٍ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ سُلَيْمَانَ بْنِ يَسَارٍ، عَنْ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ كَانَ الْفَضْلُ رَدِيفَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فَجَاءَتِ امْرَأَةٌ مِنْ خَثْعَمٍ، فَجَعَلَ الْفَضْلُ يَنْظُرُ إِلَيْهَا، وَتَنْظُرُ إِلَيْهِ فَجَعَلَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم يَصْرِفُ وَجْهَ الْفَضْلِ إِلَى الشِّقِّ الآخَرِ، فَقَالَتْ إِنَّ فَرِيضَةَ اللَّهِ أَدْرَكَتْ أَبِي شَيْخًا كَبِيرًا، لاَ يَثْبُتُ عَلَى الرَّاحِلَةِ، أَفَأَحُجُّ عَنْهُ قَالَ ‏"‏ نَعَمْ ‏"‏‏.‏ وَذَلِكَ فِي حَجَّةِ الْوَدَاعِ‏

Narrated By 'Abdullah bin 'Abbas : Al-Fadl was riding behind the Prophet and a woman from the tribe of Khath'am came up. Al-Fadl started looking at her and she looked at him. The Prophet turned Al-Fadl's face to the other side. She said, "My father has come under Allah's obligation of performing Hajj but he is a very old man and cannot sit properly on his Mount. Shall I perform Hajj on his behalf? The Prophet replied in the affirmative. That happened during Hajjat-ul-wada' of the Prophet.

حضرت عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ انہوں نے کہا: فضل بن عباس رضی اللہ عنہ نبیﷺکے ساتھ اونٹ پر سوار تھے اتنے میں خثعم قبیلے کی ایک عورت آئی حضرت فضل رضی اللہ عنہ اس کو دیکھنے لگے وہ فضل کو تکنے لگی، نبیﷺ حضرت فضل رضی اللہ عنہ کا منہ دوسری طرف پھیرنے لگے وہ عورت بولی یا رسول اللہﷺ! اللہ کا فرض (حج) ایسے وقت پر فرض ہوا کہ میرا والد بوڑھا ہے اونٹنی پر تھم نہیں سکتا کیا میں اس کی طرف سے حج کروں آپﷺ نے فرمایا: ہاں، یہ واقع حجۃ الوداع کا ہے۔

Chapter No: 25

باب حَجِّ الصِّبْيَانِ

The Hajj of boys (children etc.)

باب : بچوں کاحج کرنا

حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ أَبِي يَزِيدَ، قَالَ سَمِعْتُ ابْنَ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ يَقُولُ بَعَثَنِي ـ أَوْ قَدَّمَنِي ـ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم فِي الثَّقَلِ مِنْ جَمْعٍ بِلَيْلٍ

Narrated By Ibn 'Abbas : The Prophet sent me (to Mina) with the luggage from Jam'(i.e. Al-Muzdalifa) at night.

حضرت عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ وہ کہتے تھے نبیﷺ نے مجھے سامان کے ساتھ مزدلفہ سے رات کو منیٰ بھیج دیا۔


حَدَّثَنَا إِسْحَاقُ، أَخْبَرَنَا يَعْقُوبُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ، حَدَّثَنَا ابْنُ أَخِي ابْنِ شِهَابٍ، عَنْ عَمِّهِ، أَخْبَرَنِي عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ بْنِ مَسْعُودٍ، أَنَّ عَبْدَ اللَّهِ بْنَ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ أَقْبَلْتُ وَقَدْ نَاهَزْتُ الْحُلُمَ، أَسِيرُ عَلَى أَتَانٍ لِي، وَرَسُولُ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم قَائِمٌ يُصَلِّي بِمِنًى، حَتَّى سِرْتُ بَيْنَ يَدَىْ بَعْضِ الصَّفِّ الأَوَّلِ، ثُمَّ نَزَلْتُ عَنْهَا فَرَتَعَتْ، فَصَفَفْتُ مَعَ النَّاسِ وَرَاءَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم‏.‏ وَقَالَ يُونُسُ عَنِ ابْنِ شِهَابٍ بِمِنًى فِي حَجَّةِ الْوَدَاعِ‏

Narrated By 'Abdullah bin 'Abbas : I came riding on my she-ass and had (just) then attained the age of puberty. Allah's Apostle was praying at Mina. I passed in front of a part of the first row and then dismounted from it, and the animal started grazing. I aligned with the people behind Allah's Apostle (The sub-narrator added that happened in Mina during the Prophet's Hajjat-ul-wada.)

حضرت عبد اللہ بن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے انہوں نے کہا: میں اپنی ایک گدھی پر سوار ہوکر (منیٰ میں آیا) اس وقت میں جوانی کے قریب تھا، اور رسول اللہﷺ کھڑے ہوئے منیٰ میں نماز پڑھا رہے تھے، میں تھوڑی سی پہلی صف کے آگے بھی گزر گیا، پھر گدھی سے اترا وہ چرتی رہی، میں لوگوں کے ساتھ صف میں شریک ہوگیا رسول اللہ ﷺ کے پیچھے۔ اور یونس نے ابن شہاب سے یوں روایت کیا کہ یہ واقع منیٰ میں ہوا حجۃ الوداع میں۔


حَدَّثَنَا عَبْدُ الرَّحْمَنِ بْنُ يُونُسَ، حَدَّثَنَا حَاتِمُ بْنُ إِسْمَاعِيلَ، عَنْ مُحَمَّدِ بْنِ يُوسُفَ، عَنِ السَّائِبِ بْنِ يَزِيدَ، قَالَ حُجَّ بِي مَعَ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم وَأَنَا ابْنُ سَبْعِ سِنِينَ‏

Narrated By As-Sa'ib bin Yazid : (While in the company of my parents) I was made to perform Hajj with Allah's Apostle and I was a seven-year-old boy then.

سائب بن یزید سے روایت ہے انہوں نے کہا: مجھے رسول اللہﷺ کے ساتھ حج کرایا گیا جب میری عمر سات برس کی تھی۔


حَدَّثَنَا عَمْرُو بْنُ زُرَارَةَ، أَخْبَرَنَا الْقَاسِمُ بْنُ مَالِكٍ، عَنِ الْجُعَيْدِ بْنِ عَبْدِ الرَّحْمَنِ، قَالَ سَمِعْتُ عُمَرَ بْنَ عَبْدِ الْعَزِيزِ، يَقُولُ لِلسَّائِبِ بْنِ يَزِيدَ، وَكَانَ قَدْ حُجَّ بِهِ فِي ثَقَلِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏

Narrated By Al-Ju'aid bin 'AbdurRahman : I heard 'Umar bin 'Abdul Aziz telling about As-Sa'ib bin Yazid that he had performed Hajj (while carried) with the belongings of the Prophet.

جعید بن عبد الرحمن سے مروی ہے انہوں نے کہا: میں نے حضرت عمر بن عبد العزیز رحمہ اللہ سے سنا وہ سائب بن یزید رضی اللہ عنہ سے کہہ رہے تھے کہ سائب کو نبیﷺ کے سامان کے ساتھ(یعنی بال بچوں میں) حج کرایا گیا تھا۔

Chapter No: 26

باب حَجِّ النِّسَاءِ

Hajj of women.

باب : عورتوں کا حج کرنا

وَقَالَ لِي أَحْمَدُ بْنُ مُحَمَّدٍ حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ، عَنْ أَبِيهِ، عَنْ جَدِّهِ، أَذِنَ عُمَرُ ـ رضى الله عنه ـ لأَزْوَاجِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم فِي آخِرِ حَجَّةٍ حَجَّهَا، فَبَعَثَ مَعَهُنَّ عُثْمَانَ بْنَ عَفَّانَ وَعَبْدَ الرَّحْمَنِ بْنَ عَوْفٍ

Narrated By Ibrahim from his father from his grand-father that Umar in his last Hajj allowed the wives of the prophet(s.a.w.) to perform Hajj and he sent with them Uthman bin Affan and Abdur-Rahman bin Auf as escorts.

حضرت عمررضی اللہ عنہ نے اپنے آخری حج میں نبیﷺ کی ازواج مطہرات کو حج کرنے کی اجازت دی، ان کے ساتھ حضرت عثمان رضی اللہ عنہ اور حضرت عبد الرحمٰن بن عوف رضی اللہ عنہ کو بھیجا۔


حَدَّثَنَا مُسَدَّدٌ، حَدَّثَنَا عَبْدُ الْوَاحِدِ، حَدَّثَنَا حَبِيبُ بْنُ أَبِي عَمْرَةَ، قَالَ حَدَّثَتْنَا عَائِشَةُ بِنْتُ طَلْحَةَ، عَنْ عَائِشَةَ أُمِّ الْمُؤْمِنِينَ ـ رضى الله عنها ـ قَالَتْ قُلْتُ يَا رَسُولَ اللَّهِ أَلاَ نَغْزُوا وَنُجَاهِدُ مَعَكُمْ فَقَالَ ‏"‏ لَكُنَّ أَحْسَنُ الْجِهَادِ وَأَجْمَلُهُ الْحَجُّ، حَجٌّ مَبْرُورٌ ‏"‏‏.‏ فَقَالَتْ عَائِشَةُ فَلاَ أَدَعُ الْحَجَّ بَعْدَ إِذْ سَمِعْتُ هَذَا مِنْ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم

Narrated By 'Aisha : (Mother of the faithful believers) I said, "O Allah's Apostle! Shouldn't we participate in Holy battles and Jihad along with you?" He replied, "The best and the most superior Jihad (for women) is Hajj which is accepted by Allah." 'Aisha added: Ever since I heard that from Allah's Apostle I have determined not to miss Hajj.

حضرت عائشہ ام المؤمنین رضی اللہ عنہا سے روایت ہے انہوں نے کہا: میں نے عرض کیا یا رسول اللہﷺ! کیا ہم آپ کے ساتھ جہاد کو نہ جایا کریں،آپﷺ نے فرمایا: تم عورتوں کا عمدہ اور اچھا جہاد حج ہے۔ وہ حج جو مقبول ہو حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کہتی تھیں میں تو رسول اللہﷺ کا یہ ارشاد سننے کے بعد حج کو کبھی چھوڑنے والی نہیں۔


حَدَّثَنَا أَبُو النُّعْمَانِ، حَدَّثَنَا حَمَّادُ بْنُ زَيْدٍ، عَنْ عَمْرٍو، عَنْ أَبِي مَعْبَدٍ، مَوْلَى ابْنِ عَبَّاسٍ عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ قَالَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم ‏"‏ لاَ تُسَافِرِ الْمَرْأَةُ إِلاَّ مَعَ ذِي مَحْرَمٍ، وَلاَ يَدْخُلُ عَلَيْهَا رَجُلٌ إِلاَّ وَمَعَهَا مَحْرَمٌ ‏"‏‏.‏ فَقَالَ رَجُلٌ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِنِّي أُرِيدُ أَنْ أَخْرُجَ فِي جَيْشِ كَذَا وَكَذَا، وَامْرَأَتِي تُرِيدُ الْحَجَّ‏.‏ فَقَالَ ‏"‏ اخْرُجْ مَعَهَا ‏"‏‏

Narrated By Ibn 'Abbas : The Prophet said, "A woman should not travel except with a Dhu-Mahram (her husband or a man with whom that woman cannot marry at all according to the Islamic Jurisprudence), and no man may visit her except in the presence of a Dhu-Mahram." A man got up and said, "O Allah's Apostle! I intend to go to such and such an army and my wife wants to perform Hajj." The Prophet said (to him), "Go along with her (to Hajj)."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے انہوں نے کہا: نبیﷺ نے فرمایا: کوئی عورت اپنے محرم رشتہ دار کے بغیر سفر نہ کرے،اور کوئی شخص کسی عورت کے پاس اس وقت تک نہ جائے جب تک وہاں محرم رشتہ دار نہ ہو،ایک آدمی نے پوچھا اے اللہ کے رسولﷺ! میں تو فلاں لشکر کے ساتھ (جہاد کیلئے) نکلنا والا ہوں اور میری بیوی حج کو جانا چاہتی ہے آپﷺ نے فرمایا: اپنی بیوی کے ساتھ جاؤ۔


حَدَّثَنَا عَبْدَانُ، أَخْبَرَنَا يَزِيدُ بْنُ زُرَيْعٍ، أَخْبَرَنَا حَبِيبٌ الْمُعَلِّمُ، عَنْ عَطَاءٍ، عَنِ ابْنِ عَبَّاسٍ ـ رضى الله عنهما ـ قَالَ لَمَّا رَجَعَ النَّبِيُّ صلى الله عليه وسلم مِنْ حَجَّتِهِ قَالَ لأُمِّ سِنَانٍ الأَنْصَارِيَّةِ ‏"‏ مَا مَنَعَكِ مِنَ الْحَجِّ ‏"‏‏.‏ قَالَتْ أَبُو فُلاَنٍ ـ تَعْنِي زَوْجَهَا ـ كَانَ لَهُ نَاضِحَانِ، حَجَّ عَلَى أَحَدِهِمَا، وَالآخَرُ يَسْقِي أَرْضًا لَنَا‏.‏ قَالَ ‏"‏ فَإِنَّ عُمْرَةً فِي رَمَضَانَ تَقْضِي حَجَّةً مَعِي ‏"‏‏.‏ رَوَاهُ ابْنُ جُرَيْجٍ عَنْ عَطَاءٍ سَمِعْتُ ابْنَ عَبَّاسٍ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم‏ وَقَالَ عُبَيْدُ اللَّهِ عَنْ عَبْدِ الْكَرِيمِ، عَنْ عَطَاءٍ، عَنْ جَابِرٍ، عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم

Narrated By Ibn 'Abbas : When the Prophet returned after performing his Hajj, he asked Um Sinan Al-Ansari, "What did forbid you to perform Hajj?" She replied, "Father of so-and-so (i.e. her husband) had two camels and he performed Hajj on one of them, and the second is used for the irrigation of our land." The Prophet said (to her), "Perform 'Umra in the month of Ramadan, (as it is equivalent to Hajj or Hajj with me (in reward)."

حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے انہوں نے کہا: نبیﷺ جب حج سے واپس لوٹے تو حضرت ام سنان انصاریہ رضی اللہ عنہا سے پوچھا کہ تم حج کرنے نہیں گئی،وہ کہنے لگی فلاں کا باپ یعنی میرا خاوند اس کے پاس پانی لانے کے دو اونٹ تھے ایک پر تو خود حج کو گیا اور دوسرا ہماری زمینوں میں پانی پہنچاتا ہے آپﷺ نے فرمایا: رمضان میں عمرہ کرنا میرے ساتھ حج کرنے کے برابر ہے۔


حَدَّثَنَا سُلَيْمَانُ بْنُ حَرْبٍ، حَدَّثَنَا شُعْبَةُ، عَنْ عَبْدِ الْمَلِكِ بْنِ عُمَيْرٍ، عَنْ قَزَعَةَ، مَوْلَى زِيَادٍ قَالَ سَمِعْتُ أَبَا سَعِيدٍ ـ وَقَدْ غَزَا مَعَ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم ثِنْتَىْ عَشْرَةَ ـ غَزْوَةً ـ قَالَ أَرْبَعٌ سَمِعْتُهُنَّ مِنْ رَسُولِ اللَّهِ صلى الله عليه وسلم أَوْ قَالَ يُحَدِّثُهُنَّ عَنِ النَّبِيِّ صلى الله عليه وسلم ـ فَأَعْجَبْنَنِي وَآنَقْنَنِي ‏"‏ أَنْ لاَ تُسَافِرَ امْرَأَةٌ مَسِيرَةَ يَوْمَيْنِ لَيْسَ مَعَهَا زَوْجُهَا أَوْ ذُو مَحْرَمٍ، وَلاَ صَوْمَ يَوْمَيْنِ الْفِطْرِ وَالأَضْحَى، وَلاَ صَلاَةَ بَعْدَ صَلاَتَيْنِ بَعْدَ الْعَصْرِ حَتَّى تَغْرُبَ الشَّمْسُ، وَبَعْدَ الصُّبْحِ حَتَّى تَطْلُعَ الشَّمْسُ، وَلاَ تُشَدُّ الرِّحَالُ إِلاَّ إِلَى ثَلاَثَةِ مَسَاجِدَ مَسْجِدِ الْحَرَامِ، وَمَسْجِدِي، وَمَسْجِدِ الأَقْصَى ‏"‏‏

Narrated By Qaza'a : The slave of Ziyad: Abu Said who participated in twelve Ghazawat with the Prophet said, "I heard four things from Allah's Apostle (or I narrate them from the Prophet) which won my admiration and appreciation. They are: 1. "No lady should travel without her husband or without a Dhu-Mahram for a two-days' journey. 2. No fasting is permissible on two days of 'Id-al-Fitr, and 'Id-al-Adha. 3. No prayer (may be offered) after two prayers: after the 'Asr prayer till the sun set and after the morning prayer till the sun rises. 4. Not to travel (for visiting) except for three mosques: Masjid-al-Haram (in Mecca), my Mosque (in Medina), and Masjid-al-Aqsa (in Jerusalem)."

قزعہ سے روایت ہے جو زیاد کے غلام تھے انہوں نے کہا: میں نے ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ سے سنا انہوں نے نبیﷺ کے ساتھ بارہ جہاد کیے تھے وہ کہتے تھے میں نے رسول اللہﷺ سے چار باتیں سنیں ہیں یا چار باتیں حضرت ابو سعید خدری رضی اللہ عنہ نبی ﷺ سے نقل کرتے تھے وہ کہتے تھے مجھے یہ باتیں انتہائی پسند ہیں کہ کوئی عورت دو دن کا سفر اس وقت تک نہ کرے جب تک اس کے ساتھ اس کا شوہر یا کوئی محرم رشتہ دار نہ ہو، دوسرے عید الفطر اور عید الاضحیٰ کے دن روزے نہ رکھے جائیں، تیسرے دو نمازوں کے بعد کوئی نماز نہیں: عصر کے بعد سورج ڈوبنے تک اور فجرکے بعد سورج نکلنے تک۔ چوتھے تین مسجدوں (مسجد حرام، مسجد نبوی ، مسجد اقصیٰ) کے علاوہ کسی کی طرف کجاوے نہ باندھے جائیں۔

Chapter No: 27

باب مَنْ نَذَرَ الْمَشْىَ إِلَى الْكَعْبَةِ

Whoever vowed to go on foot to the Kabah.

باب : اگر کسی نے کعبے تک پیدل جانے کی منت مانی۔

حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ ابْنُ سَلاَمٍ، أَخْبَرَنَا الْفَزَارِيُّ، عَنْ حُمَيْدٍ الطَّوِيلِ، قَالَ حَدَّثَنِي ثَابِتٌ، عَنْ أَنَسٍ ـ رضى الله عنه ـ أَنَّ النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم رَأَى شَيْخًا يُهَادَى بَيْنَ ابْنَيْهِ قَالَ ‏"‏ مَا بَالُ هَذَا ‏"‏‏.‏ قَالُوا نَذَرَ أَنْ يَمْشِيَ‏.‏ قَالَ ‏"‏ إِنَّ اللَّهَ عَنْ تَعْذِيبِ هَذَا نَفْسَهُ لَغَنِيٌّ ‏"‏‏.‏ وَأَمَرَهُ أَنْ يَرْكَبَ‏

Narrated By Anas : The Prophet saw an old man walking, supported by his two sons, and asked about him. The people informed him that he had vowed to go on foot (to the Ka'ba). He said, "Allah is not in need of this old man's torturing himself," and ordered him to ride.

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبیﷺنے ایک بوڑھے کو دیکھا جو اپنے دو بیٹوں کا سہارا لے کر چل رہا تھا ،آپﷺنے پوچھا اس کو کیا ہوا ہے لوگوں نے عرض کیا اس نے پیدل کعبہ کو جانے کی منت مانی ہے آپﷺنے فرمایا: اللہ کو اس کی حاجت نہیں ہے کہ یہ اپنے آپ کو تکلیف میں ڈالے، پھر آپﷺ نے انہیں حکم دیا کہ سوار ہوجائے۔


حَدَّثَنَا إِبْرَاهِيمُ بْنُ مُوسَى، أَخْبَرَنَا هِشَامُ بْنُ يُوسُفَ، أَنَّ ابْنَ جُرَيْجٍ، أَخْبَرَهُمْ قَالَ أَخْبَرَنِي سَعِيدُ بْنُ أَبِي أَيُّوبَ، أَنَّ يَزِيدَ بْنَ أَبِي حَبِيبٍ، أَخْبَرَهُ أَنَّ أَبَا الْخَيْرِ حَدَّثَهُ عَنْ عُقْبَةَ بْنِ عَامِرٍ، قَالَ نَذَرَتْ أُخْتِي أَنْ تَمْشِيَ، إِلَى بَيْتِ اللَّهِ، وَأَمَرَتْنِي أَنْ أَسْتَفْتِيَ لَهَا النَّبِيَّ صلى الله عليه وسلم فَاسْتَفْتَيْتُهُ، فَقَالَ عَلَيْهِ السَّلاَمُ ‏"‏ لِتَمْشِ وَلْتَرْكَبْ ‏"‏‏.‏ قَالَ وَكَانَ أَبُو الْخَيْرِ لاَ يُفَارِقُ عُقْبَةَ‏.‏حَدَّثَنَا أَبُو عَاصِمٍ، عَنِ ابْنِ جُرَيْجٍ، عَنْ يَحْيَى بْنِ أَيُّوبَ، عَنْ يَزِيدَ، عَنْ أَبِي الْخَيْرِ، عَنْ عُقْبَةَ،، فَذَكَرَ الْحَدِيثَ‏

Narrated By 'Uqba bin 'Amir : My sister vowed to go on foot to the Ka'ba, and she asked me to take the verdict of the Prophet about it. So, I did and the Prophet said, "She should walk and also should ride."

حضرت عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے روایت ہے انہوں نے کہا: میری بہن نے بیت اللہ تک پیدل جانے کی منت مانگی اور مجھ سے کہنے لگی تم نبیﷺ سے یہ مسئلہ پوچھ کے آؤ، تو میں نے آپﷺ سے پوچھا آپﷺ نے فرمایا: وہ پیدل بھی چلے اور سوار بھی ہو۔

123